چھٹیاں منانے گئی خاتون کے ساتھ ہوٹل کے ایک درجن عملے کی جنسی زیادتی اور پھر اس کی ویڈیو بنا کر اپنے۔۔۔

73

روم(نیوز ڈیسک)برطانیہ سے تعلق رکھنے والی ایک ادھیڑ عمر خاتون کے لئے اٹلی کی سیر کو جانا ایک ایسا بھیانک خواب بن گیا جو عمر بھر ان کے دماغ سے محو نہیں ہو پائے گا۔ چھٹیوں کے آخری دن ہوٹل کے درجن بھر اوباش ملازمین نے انہیں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالااور پھر اس لرزہ خیز جرم کی ویڈیو بھی واٹس ایپ پر پوسٹ کردی۔

مقامی میڈیا کے مطابق یہ افسوسناک واقعہ مشہور تفریحی مقام سورینٹو کے ایک بڑے اور معروف ہوٹل میں پیش آیا۔ پولیس نے پانچ ملزمان کو گرفتار کیا ہے جن کے نام اونٹوریو منیرو، گینارو ڈیوڈ، فیبیو ورگیلیو، رافیل ریگیو اور فرانچسکو ڈی انٹونیو بتائے گئے ہیں، جبکہ مزید سات افراد مفرور ہیں۔

دی مرر کے مطابق متاثرہ خاتون کا کہنا ہے کہ انہیں ہوٹل کے دو ملازمین نے نشہ آور مشروب پلایا جس کے بعد وہ انہیں قریبی سوئمنگ پول میں لے گئے اور اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا۔ بعدازاں وہ انہیں ہوٹل کے کمرے میں لے گئے جہاں تقریباً ایک درجن افراد نے باری باری انہیں زیادتی کا نشانہ بنایا۔ شیطان صفت ملازمیں نے اس تمام واقعے کی ویڈیو ایک واٹس ایپ گروپ میں شیئر کی جس کے بعد یہ معاملہ منظر عام پر آیا۔ اس ویڈیو کی مدد سے ہی پولیس نے متعدد ملزمان کو شناخت کیا اور ان کے ڈی این اے ٹیسٹ کرکے اس بھیانک جرم میں ان کے جرم میں ملوث ہونے کے ثبوت حاصل کئے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.