محمد عباس کی تباہ کن باولنگ کی بدولت پاکستان نے آسٹریلیا کو شکست دے کر سیریز جیت لی

4

ابوظہبی : محمد عباس کی تباہ کن باولنگ کی بدولت پاکستان نے دوسرے ٹیسٹ میچ میں آسٹریلیا کو373رنز سے شکست دے کر 1-0 سے سیریز اپنے نام کر لی ہے ۔پہلا ٹیسٹ میچ ڈرا ہو ا جس کے باعث دونوں ٹیموں کو ایک ایک پوائنٹ دیا گیا تھا ۔

تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا کی پوری ٹیم پاکستان کی جانب سے دیئے گئے 538 رنز کے ہدف کے تعاقب میں164رنز بنا کر آوٹ ہو گئی جس میں لبوس چینج 43رنز کے ساتھ ٹاپ سکورر رہے جبکہ ٹی ایم ہیڈ 36 رنز کے ساتھ دوسرے اور ایرون فنچ 31 رنز کے ساتھ تیسرے نمبر پر رہے ، مچل سٹارک نے 28 رنز کی اننگ کھیلی ۔پاکستان کی جانب سے سب سے زیادہ وکٹیں محمد عباس نے حاصل کیں اور انہوں نے5 کھلاڑیوں کو پولین پہنچایا ان کے بعد یاسر شاہ نے 3 وکٹیں حاصل کیں جبکہ حمزہ نے بھی ایک کھلاڑی کو آوٹ کیا ۔

پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تو 57 رنز پر پانچ وکٹیں گر گئیں تاہم فخر زمان نے ٹیم کی قیادت کا بیڑہ سنبھالا اور شاندا ر بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے وکٹ پر موجود رہے ۔ چھٹے نمبر پر سرفراز احمد میدان میں اترے اور انہوں نے فخر زمان کے ساتھ اچھی شراکت قائم کی جس کی بدولت پاکستان قابل دفاع سکور282 کرنے میں کامیاب رہا ۔ فخر زمان اور کپتان سرفراز نے 94،94 رنز کی اننگ کھیلی تاہم دونوں ہی کھلاڑی سینچریاں مکمل نہیں کر سکے ۔

آسٹریلیا نے پاکستان کے 282 رنز کے جواب میں بیٹنگ کا آغاز کیا تو محمد عباس مخالف ٹیم کے بلے بازوں پر ٹوٹ پڑے اور ان کی ٹیم کے پرخچے اڑا کررکھ دیئے ، محمد عباس کی باولنگ کی بدولت پاکستان نے آسٹریلیا کو 145 رنز پر روک لیا اور 137 رنز کی برتری حاصل کر لی ۔ محمد عباس نے آسٹریلیا کے پانچ کھلاڑیوں کو پولین پہنچایا اور عالم کرکٹ میں اپنا نام سنہرے حروف میں لکھوایا ۔

پاکستان نے دوسری اننگ کاآغاز کیا اورتمام بے بازوں نے جم کر بیٹنگ کی تاہم گزشتہ شام کھیل ختم ہونے سے کچھ دیر قبل پاکستان نے 9 وکٹوں کے نقصان پر 400 رنز بنا کر اننگ ڈکلیئر کر دی اور آسٹریلیا کو 538 رنز کا ہدف دیا ۔جس میں بابراعظم نے انتہائی شاندار بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 99 رنز کی اننگ کھیلی تاہم وہ سینچری بنانے میں کامیاب نہیں ہوئے ۔ ان کے علاوہ کپتان سرفراز نے 81رنز بنائے اور دوسرے نمبر پر رہے ان کے علاو ہ فخرز مان نے 66 ، اظہر علی 64اور اسد شفیق نے 44 رنز بنائے ۔

میچ کے دوران گزشتہ روز دوسری اننگ میں پاکستانی کھلاڑی اظہر علی کے ساتھ انتہائی دلچسپ ترین واقع اس وقت پیش آیا جب وہ رن آوٹ ہوئے ۔ اظہر علی نے اوف کی جانب چوکے کیلئے سویپ شاٹ کھیلی اور وہ سمجھے کہ گیند باونڈر کو لگنے کے بعد رک گئی ہے اور انہوں نے زیادہ غور نہیں کیا اور اپنا رن مکمل کیے بغیر ہی پچ کے درمیان میں اسد شفیق سے گفتگو میں مگن ہو گئے ۔ دراصل گیند خود ہی باونڈر سے ایک فٹ پیچھے رک گئی اور اظہر علی کو اس کا اندازہ ہی نہیں ہوا۔

فیلڈر نے موقع سے فائدہ اٹھاتے ہو ئے گیند فوری طور پر کیپر کے پاس پھینکی اور کیپر نے آرام کے ساتھ گیند کو سٹمپس کے ساتھ لگا دیا اور چیخ و پکار کرتے ہوئے بھاگنے لگا ۔یہ منظر دیکھ کر اظہر علی کافی تذبذب کا شکار ہوئے تاہم بعد میں انہیں محسوس ہوا کہ اپنی نادان غلطی کے باعث آوٹ ہو گئے ہیں ۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.