نیوزی لینڈ کی مساجد پر حملہ، نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے ایسی لرزہ خیز تفصیلات بتا دیں کہ ہر کوئی کانپ اٹھا

32

ویلنگٹن: نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسینڈا آرڈن نے کہا ہے کہ مسجد میں فائرنگ دہشت گردی ہے جس کے نتیجے میں 40 افراد جاں بحق ہوئے ہیں، مجرمانہ سوچ کے حامل افراد نے مکمل منصوبہ بندی کے تحت دہشت گردانہ حملہ کیا جس کی شدید مذمت کرتے ہیں تفصیلات کے مطابق نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسینڈا آرڈن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مجرمانہ سوچ کے حامل افراد نے مکمل منصوبہ بندی کے تحت دہشت گرد حملہ کیا جس کے نتیجے میں 40 افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے 3 افراد کو حراست میں لے لیا ہے جن سے تفتیش جاری ہے، پولیس پوری طرح متحرک اور شہریوں کو مکمل تحفظ دینے کیلئے کوشاں ہے، شہریوں سے درخواست ہے کہ وہ پولیس کی ہدایات پر عمل کریں۔

انہوں نے کہا کہ آج کا حملہ دہشت گردی ہے اور اس کیلئے نیوزی لینڈ کا انتخاب کیا گیا، آج کا واقعہ ہمارے معاشرے کی عکاسی نہیں کرتا اور ہم اس دہشت گرد حملے کی شدید مذمت کرتے ہیں اور ذمہ داروں کو قانون کے کٹہرے میں لائیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ زیر حراست ایک شخص کی شہریت آسٹریلوی ہے جبکہ دیگر کی شہریت سے متعلق ابھی نہیں بتا سکتے اور ابھی بہت سی معلومات سامنے نہیں لا سکتے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم اپنے طور پر تیار رہتے ہیں مگر آج کا حملہ اچانک تھا اور حملہ کرنے والے دہشت گرد واچ لسٹ میں شامل نہیں تھے ، واقعے کا ہر پہلو سے جائزہ لیا جا رہا ہے اور تفتیش کی جا رہی ہے کہ ملزمان تک اسلحہ کیسے پہنچا جبکہ جن افراد کو حراست میں لیا گیا ہے ان کی کار میں بھی بارودی مواد نصب تھا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.