مریم نواز اور  بلاول حکومت خلاف متحد ہوگئے

2

لاہور(مانیٹرنگ رپورٹ ) پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول زرداری اور مسلم لیگ (ن) کی نائب صدرمریم نواز نے حکومت کے خلاف متحد ہوکر چلنے پر اتفاق کرلیا ۔ دونوں قائدین کے درمیان جاتی امرا میں اہم ملاقات ہوئی، جس میں ملکی سیاسی صورت حال،ججز ریفرنس،بجٹ، مہنگائی،نیب کیسز، پروڈکشن آرڈرز سمیت کئی اہم امورزیر بحث آئے ۔ ملاقات کے بعدمشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا جسکے مطابق بلاول بھٹو اور مریم نواز نے کہاہے کہ حکمران اپوزیشن، عدلیہ، میڈیا سمیت ہر اختلافی آواز پر حملہ آورہیں، ججز کیخلاف ریفرنس عدلیہ پر حملہ قرار دیتے ہوئے اسے واپس لینے کا مطالبہ کیا گیااور چیئرمین نیب کی کارروائیوں کو یکطرفہ قرار دیا گیا۔ اعلامیہ میں کہا گیا کہ حکومت کیخلاف تحریک کیلئے تمام اپوزیشن جماعتوں سے رابطہ کیا جائیگا، جیلیں دیکھنے والی جماعتوں کو سلیکٹڈ حکومت سے کوئی خوف نہیں،نئے پاکستان کے نام پر ہونے والا فراڈ قوم کو مزید برداشت نہیں۔بلاول بھٹو نے کہا کہ آئی ایم ایف بجٹ عوام اور ملک دشمن ہے، اسے منظور نہیں ہونے دینگے، امید ہے مریم نواز سچائی سے چلیں گی ۔ دونوں پارٹیوں کی قیادت نے مل کر حکمت عملی بنانے پر اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ مقبول سیاسی جماعتیں ہی قوم کو نیا اعتماد، مسائل سے نکلنے کا لائحہ عمل اور متحد کرسکتی ہیں ۔ ملاقات میں مولانا فضل الرحمٰن کی مجوزہ آل پارٹیز کانفرنس اور دونوں جماعتوں کے مشترکہ لائحہ عمل پر بھی بات ہوئی۔ بلاول بھٹو زرداری اور مریم نواز نے اتفاق کیا کہ موجودہ غیر نمائندہ حکومت عوام کے حقیقی مینڈیٹ کی ترجمانی نہیں کرتی۔ اس سے پہلے بلاول بھٹو کے جاتی امراء پہنچنے پر مریم نواز اور کیپٹن (ر) محمد صفدر نے انکا استقبال کیا ہے۔ ملاقات میں بلاول بھٹو زرداری کے ہمراہ قمر زمان کائرہ، چوہدری منظور، حسن مرتضیٰ اور مصطفیٰ نواز کھوکھربھی موجود تھےجبکہ مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب ، رانا ثناء اللہ ، ایاز صادق،اور سابق گورنرسندھ محمد زبیر بھی ملاقات میں موجود تھے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.