”خبر دار اگر کوئی اس فوجی اڈے کے قریب بھی آیا ۔۔۔“امریکی فضائیہ نے خبر دار کردیا ،لیکن یہ اعلان کیوں کرنا پڑ ا؟یہ کسی دشمن کے حملے کے لیے نہیں بلکہ ۔

20

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) خلائی مخلوق کا معاملہ دنیا کے پراسرار ترین معاملوں میں سے ایک ہے۔ خلائی مخلوق کی اڑن طشتریاں دیکھے جانے کے سب سے زیادہ شواہد امریکی ریاست نیواڈا کے علاقے ایریا 51سے ملتے ہیں اور یہی وہ علاقہ ہے جہاں امریکہ کا پراسرار ترین فوجی اڈا ہے۔ اب فیس بک پر ساڑھے 5لاکھ لوگوں نے اس علاقے پر چڑھائی کرنے کا اعلان کر دیا ہے اور دوسری طرف امریکی فوج کی طرف سے بھی ان لوگوں کے لیے وارننگ جاری کر دی گئی ہے کہ اس علاقے کی طرف آنے کی جرات نہ کریں، جس سے ایک ایسی صورتحال پیدا ہو گئی کہ ممکنہ طور پر خلائی مخلوق کی حقیقت جاننے کے لیے مچل رہے ان لوگوں اور امریکی فوج میں تصادم ہو کر رہے گا۔

ضرور پڑھیں: لوٹے مال کی واپسی کا خواب حقیقت بن رہا ہے، لٹیروں کی صفوں میں بوکھلاہٹ اور افراتفری پھیل چکی ہے،فردوس عاشق اعوان
ویب سائٹ thedailybeast.com کے مطابق فیس بک پر ایک ایونٹ شروع کیا گیا ہے جس کا نام ’سٹارم ایریا 51، دے کین ناٹ سٹاپ آل آف اَس‘ ہے یعنی ’ایریا 51پر چڑھائی کر دو، وہ ہم سب کو نہیں روک سکتے۔‘اب تک ساڑھے 5لاکھ لوگ اس ایونٹ کے لیے رضامند ہو چکے ہیں اور فیس بک پر ’گوئنگ‘ (Going)کا آپشن منتخب کر چکے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں لوگوں کا ماننا ہے کہ یہ دنیا کا وہ پراسرار ترین مقام ہے جہاں ممکنہ طورپر خلائی مخلوق آتی رہتی ہے اور امریکی حکام سے یہیں ان کا رابطہ ہوتا ہے تاہم امریکی حکام اسے دنیا سے چھپائے ہوئے ہیں۔ چنانچہ اب لوگ خود اس جگہ پرپہنچ کر حقیقت جاننا چاہتے ہیں اور اسی مقصد کے لیے فیس بک پر اس ایونٹ کا انعقاد کیا گیا ہے۔ فیس بک پر اس ایونٹ کی تاریخ 20ستمبر 2019ءدی گئی ہے، گویا اس روز لوگ اس پراسرار امریکی فوجی اڈے پر چڑھائی کریں گے۔ان لوگوں کو متنبہ کرتے ہوئے امریکی ایئرفورس کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ”ایرا51امریکی ایئرفورس کی اوپن ٹریننگ رینج ہے۔ کوئی اس علاقے کی طرف آنے کی جرا¿ت نہ کرے جہاں امریکی مسلح افواج کو ٹریننگ دی جاتی ہے۔ “ اپنے بیان میں امریکی ایئرفورس کی ترجمان لورا مک اینڈریوز کا کہنا تھا کہ ”امریکی ایئرفورس ہمیشہ امریکہ اور اس کے مفادات کے دفاع کے لیے تیار رہتی ہے۔چنانچہ ہم لوگوں کو اس علاقے میں آنے سے بھی روکیں گے کیونکہ یہ امریکی کی قومی سلامتی کا مسئلہ ہے۔“ امریکی ایئرفورس کی طرف سے اس وارننگ کے باوجود اس فیس بک ایونٹ میں شرکت کے خواہشمندوں کی تعداد بڑھتی جا رہی ہے اور لوگ کمنٹس میں امریکی ایئرفورس کو چیلنج کر رہے ہیں۔ ایک صارف نے لکھا ہے کہ ”اگر ہم متحد ہو کر دوڑیں تو ان کی گولیوں سے زیادہ تیز دوڑ سکتے ہیں۔ہم ایریا 51میں جا کر رہیں گے۔“

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.